جب پتہ چلا کہ کورونا ہے تو سب سے تکلیف ۔۔۔ ثانیہ مرزا نے آئسولیشن میں رہنے کی دردناک داستان بیان کر دی

مقبول بھارتی ٹینس اسٹار ثانیہ مرزا نے کووڈ 19 وبا کا شکار ہونے کے بعد قرنطینہ میں جانے اور گھر والوں سے الگ تھلک رہنے کے حوالے سے اپنی دردناک داستان مداحوں کے ساتھ شئیر کردی۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹاگرام پر انھوں نے اپنے بیٹے اذہان کے ہمراہ ایک پیار بھری تصویر شیئر کی۔

اس تصویر کے ساتھ انھوں نے اپنی روداد سناتے ہوئے کہا کہ میں کوویڈ 19 کا شکار ہوئی، لیکن میں اب رب باری تعالیٰ کی مہربانی سے بالکل ٹھیک ہوں لیکن میں یہاں اپنا تجربہ شیئر کرنا چاہتی ہوں۔

انھوں نے لکھا کہ میں خوش قسمت ہوں کہ میرے اندر کورونا وائرس سے متعلق بڑی علامات سامنے نہیں آئیں، لیکن میں نے تنہائی اختیار کی جس میں میرا مشکل ترین وقت اپنے دو سالہ بیٹے اور اہلِ خانہ سے دوری تھا۔

ثانیہ نے لکھا کہ میں تصور نہیں کرسکتی جس طرح کورونا سے متاثرہ مریض اور ان کے اہلِ خانہ اذیت سے گزرتے ہیں جب کوئی بیمار ہوکر اسپتال میں اکیلا ہوتا ہے اور صرف خود پر ہی انحصار کر رہا ہوتا ہے۔

شعیب ملک کی اہلیہ ثانیہ نے کہا کہ اس اکیلے پن میں آپ میں نئی علامات سامنے آتی رہتی ہیں اور بے چینی میں اضافہ ہوجاتا ہے، ایسے میں آپ کے لیے اس بیماری کو جھیلنا نہ صرف جسمانی طور پر بلکہ ذہنی اور جذباتی طور پر بھی مشکل ہوجاتا ہے۔

ثانیہ کا کہنا تھا کہ یہ وائرس مذاق نہیں ہے، میں نے اس وائرس سے بچاؤ کی تمام احتیاطی تدابیر اختیار کیں لیکن پھر بھی یہ وائرس مجھے لگ گیا۔

انھوں نے مداحوں سے کہا کہ ہمیں خود کو، اہلِ خانہ کو اور دوستوں کو محفوظ رکھنے کے لیے سب کچھ کرنا ہوگا ساتھ ہی انہوں نے اپنے چاہنے والوں کو مشورہ دیا کہ ماسک پہنیں، بار بار ہاتھ دھوئیں اور اپنے اہلخانہ اور عزیز رشتہ داروں کا خیال رکھیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.