سعودی حکومت نے شرمناک کام کا آغاز کر دیا

سمندر کنارے بننے والی اس سیر گاہ کی خصوصیت یہ ہے کہ یہاں پر خواتین سرعام فحش کپڑے پہن سکتی ہیں اور سمندر کا لطف اٹھا سکتی ہیں. اسکے علاوہ غیر شادی شدہ جوڑے بھی یہاں پر آکر اپنی چھٹیاں بہترین طریقے سے گزار سکتے ہیں. سعودی حکومت کا کہنا ہے کہ سعودی عرب میں پہلے سے ہی سمندر کنارے تفریح گاہے موجود ہیں جہاں پر روزانہ ہزاروں سعودی تفریح کے لیے جاتے ہیں لیکن وہاں پر آئی خواتین صرف برقے میں دکھائی دیتی ہیں اور مرد خضرات مکمل کپڑوں میں، جسکی وجہ سے یورپ، برطانیہ، اور امریکا جیسے ملکوں سے آئے انگریز سیاح اپنے من چاہے کپڑوں میں سمندر کنارے چھٹیاں نہیں گزار سکتے.

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.