حاجی صاحب کی کہانی

حاجی صاحب مالش کرنے والے سے مالش کروا رہے تھے کہ اتنے میں ایک آدمی آیا اور کہنے لگا: ” کیا حال ہے حاجی صاحب… آپ نظر نہیں آتے آج کل؟ ” حاجی صاحب نے اس کی بات سنی ان سنی کر دی. وہ بندہ کہنے لگا: ” حاجی صاحب… میں آپ کی سائیکل لے کے جا رہا ہوں”

‏وہ سائیکل مالشی کی تھی. کافی دیر ہو گئی تو مالشی کہنے لگا: ” حاجی صاحب… آپ کا دوست آیا نہیں ابھی تک واپس میری سائیکل لے کر؟ ” حاجی صاحب بولے : ” وہ میرا دوست نہیں تھا” مالشی بولا: ” مگر وہ تو آپ سے باتیں کر رہا تھا” حاجی صاحب بولے: ‏” میں تو اس کو جانتا ہی نہیں ہوں. میں تو سمجھا تھا کہ وہ تمہارا دوست ہے” مالشی بولا: ” حاجی صاحب… میں غریب آدمی ہوں. میں تو لٹ گیا” حاجی حاحب بولے: ” اچھا تو رو مت. میں تجھے نئی سائیکل لے دیتا ہوں. تم سائیکل والی دوکان پر جا کے پسند کر لو ‏مالشی نے ایک سائیکل پسند کی اور چکر لگا کے دیکھا. واپسی پر آکر کہنے لگا کہ حاجی صاب یہ سائیکل زرا ٹیڑھی چل رہی ہے حاجی نے کہا: “جا یار نئی سائیکل ہے. یہ ٹھیک ہے. دکھاو میں چیک کرتا ہوں” حاجی صاحب سائیکل پر چکر لگانے گئے اور واپس آئے ہی نہیں. ‏مالشی کو اس سائیکل کے پیسے بھی دینے پڑ گئے 🤔🤣😂😂🤣 آج ایسا ہی حال پاکستانی قوم کے ساتھ ہو رہا ہے. ہر نیا آنے والا حکمران حاجی ہے اور عوام مالشی

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.