عورت جو کسی مرد کے ساتھ نہ سوئی ہو

کردار صرف عورت کا ہی نہیں ہوتا مرد حضرات بھی جب کردار سے گر جائیں گے تو بد کردار ہی کہلائیں گے پردہ عورت کی اور داڑھی مرد کی پہچان ہے

جس نے قصر یزیدی کولر زاد یاوہ کوئی مرد نہیں تھا بلکہ وہ عورت تھی حضرت زینب بنت علی سب سے پہلے جس نے صفاومروہ کمیسعی انجام دی وہ کوئی مرد نہیں تھا بلکہ ایک عورت تھیں حضرت ہاجرہ خاتون عورت اگر خوبصورت نظر آتا چاہتی ہے تو اسے چاہیے کہ نظر ی نہ آے

مرد بھول جاتا ہے معاف نہیں کرتا عورت معاف کر دیتی ہے بھولی نہیں زبان سے معاف کرنے میں وقت نہیں لگتا مگر دل سے معاف کرنے میں عمریں بیت جاتی ہیں اور دل کی عدالت سے ہر کوئی اتنی جلدی باعزت بری نہیں ہوسکتا

عورت اگر بیوی ہے تو غلام ہے اگر بیٹی ہے تو بوجھ ہے اگر بہن ہے تو شک کا شکار ہے بس عورت اب ماں کے روپ میں ہی کچھ اہمیت کی حامل رہ گئی ہے زبان سے معاف کرنے میں وقت نہیں لگتا مگر دل سے معاف کرنے میں عمریں بیت جاتی ہیں اور دل کی عدالت سے ہر کوئی اتنی جلدی باعزت بری نہیں ہوسکتا

عورت کی خوبی دو باتوں میں ہے ۔ ا : اس کو کوئی نامحرم نہ دیکھے ۔ ۲ : وہ کسی نامحرم کو نہ دیکھے ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.