حیرت انگیز گاؤں۔ جہاں پیدا ہونے والی ہر لڑکی 12سال کی عمر میں لڑکا بن جاتی ہے

کیربیئن کے ایک دور دراز کے گاؤں میں لڑکیاں جیسے ہی بلو غت کی عمر کو پہنچتی ہیں اُن کی جنستبدیل ہوجاتی ہے۔ایک جنیا تی بیماری کے باعث ڈومینیکن ری پبلک کے گاؤں سالیناس میں پیدا ہونے والی 90 فیصد لڑکیاں 12 سال کی عمر میں لڑکا بن جاتی ہیں۔

سالیناس میں لڑکی سے لڑکا بننے والوں کو مرد اور عورت کے ساتھ تیسری جنسکے طور پر دیکھا جاتا ہے۔یہ نایاب بیماری ایک انزائم کی کمی کی وجہ سے ہوتی ہے، جس میں رحم میں مرد انہ ہار مونز dihydro-testosterone کا بننا رک جاتا ہے۔ ایسے بچے جب پیدا ہوتے ہیں تو وہ لڑ کیوں کی طرح ہوتے ہیں لیکن بلو غت کی عمر تک پہنچنے پر اُن میں یہ ہارمو نز بن جاتے ہیں۔ایسے مردوں کو machihembras بھی کہا جاتا ہے، جس کا مطلب ہوتا ہے ”پہلے عورت پھر مرد“۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.