پاکستان میں پابندیوں کی وجہ سے بولڈ سین نہیں سکتی، صباقمر کا بھارتی میڈیا کو انٹرویو، مزید کیا کیا کہا؟ 

لاہور(نیوز ڈیسک)بالی وڈ فلم ہندی میڈیم میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی پاکستانی اداکارہ صبا قمر نے حال ہی میں بھارتی خبر رساں ادارے ’پریس ٹرسٹ آف انڈیا‘ کو لاہور سے ٹیلیفون پر انٹرویو دیا۔اداکارہ نے اپنے انٹرویو میں

بالی وڈ میں کام کرنے کے تجربات اور پاک بھارت کی فلموں اور ڈراموں کے مواد میں فرق کے حوالے سے بھی بات چیت کی۔صبا قمر نے کہا کہ میں اپنی پہلی فلم میں عرفان خان کے ساتھ کام کرنے پر خود کو خوش قسمت سمجھتی ہوں، ہندی میڈیم کے بعد جب اداکارہ ودیا بالن نے میری تعریف کی تو اس وقت لگا جیسے میں چاند پر ہوں۔اداکارہ نے کہا کہ جب مجھے فلم فیئر ایوارڈز  میں ودیا بالن، سری دیوی، کنگنا رناوت اور عالیہ بھٹ کے ساتھ بہترین اداکارہ کی کیٹیگری میں شامل کیا گیا تو اس وقت میری خوشی دیدنی تھی۔انہوں نے بالی وڈ میں مزید کام کرنے سے متعلق کہا کہ میں ایک مثبت سوچ کی مالک ہوں اور اچھے کی امید کررہی ہوں، اگر خدا نے چاہا تو مستقبل میں مزید فلمیں کروں گی۔صبا قمر نے بھارتی مواد کو پاکستان سے بہتر قرار دیا اور کہا کہ اب بھارت میں کرداروں کو حقیقی روپ دیا جانے لگا ہے، بھارت اب روایتی ساس اور بہو کے کردار دکھانے سے کافی آگے نکل چکا ہے۔اداکارہ کا کہنا تھا کہ پاکستان میں مختلف قسم کا مواد تیار کیا جاتا ہے،  پاکستان میں پابندیاں عائد ہیں اسی لیے وہاں بولڈ سین بھی نہیں کیے جاسکتے لیکن  پاکستان میں اب بولڈ موضوعات پر بات کی جانے لگی ہے جس سے لوگ سیکھ رہے ہیں۔واضح رہے کہ صبا قمر اور نعمان اعجاز کی پاکستانی فلم ‘مسٹر شمیم’ ’ کو 11 مارچ سے بھارتی اسٹریمنگ ویب سائٹ ’زی فائیو‘ پر ریلیز کیا جائے گا شدید کنواری، دلہے کی تلاش میں پھر رہی ہے ماری ماری….ہر وقت دلہن کے روپ میں رہنےوالی لڑکی کو کیسا دلہا چاہیے؟

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.